#7105.01

مصنف : ڈاکٹر فاروق حسن

مشاہدات : 1027

فن اصول فقہ کی تاریخ عہد رسالت صلی اللہ علیہ وسلم سے عہد حاضر تک جلد دوم

  • صفحات: 475
  • یونیکوڈ کنورژن کا خرچہ: 19000 (PKR)
(جمعرات 31 اگست 2023ء) ناشر : دار الاشاعت، کراچی

وہ علم جس میں احکام کے مصادر،ان کے دلائل،استدلال کے مراتب اور شرائط سے بحث کی جائے اور استنباط کے طریقوں کو وضع کر کے معین قواعد کا استخراج کیا جائے جن قواعد کی پابندی کرتے ہوئے مجتہد تفصیلی دلائل سے احکام معلوم کرے اس علم کا نام اصول فقہ ہے۔ جس طرح کسی بھی زبان کو جاننے کے لیے اس زبان کے قواعد و اصول کو سمجھنا ضروری ہے اسی طرح فقہ میں مہارت حاصل کرنے کے لیے اصول فقہ میں دسترس اور عبور حاصل کرنا ضروری ہے۔ اس علم کی اہمیت کے پیش نظر ائمہ فقہاء و محدثین نے اس موضوع پر کئی کتب تصنیف کی ہیں۔ امام شافعی رحمہ اللہ وہ پہلے امام ہیں جنہوں نے اس موضوع پر سب سے پہلے قلم اٹھایا اور ’’الرسالہ‘‘کے نام سے کتاب تحریر کی۔ پھر اس کی روشنی میں دیگر اہل علم نے کتب مرتب کیں۔اصول فقہ کی تاریخ میں بیسویں صدی کو خصوصی اہمیت حاصل ہے۔ اس دور میں علم اصول فقہ نے ایک نئی اٹھان لی اور اس پر کئی جہتوں سے کام کا آغاز ہوا:مثلاً تراث کی تنقیح و تحقیق ،اصول کا تقابلی مطالعہ،راجح مرجوح کا تعین اور مختلف کتب میں بکھری مباحث کو یک جا پیش کرنے کے ساتھ ساتھ موجودہ قانونی اسلوب اور سہل زبان میں پیش کرنا وغیرہ۔اس میدان میں کام کرنے والے اہل علم میں ایک نمایاں نام ڈاکٹر عبد الکریم زیدان کا بھی ہے۔ اصول فقہ پر ان کی بہترین کتاب ’’ الوجیز فی اصول الفقہ‘‘اسی اسلوب کی نمائندہ کتاب ہے اور اکثر مدارس دینیہ میں شامل نصاب ہے۔ زیر نظر کتاب ’’ فن اصول فقہ کی تاریخ، عہد رسالتﷺ سے عہد حاضر تک‘‘محترم ڈاکٹر فاروق حسن صاحب کی طرف سے جامعہ کراچی میں پی ایچ ڈی کے لیے پیش کیے گئے تحقیقی مقالہ کی کتابی صورت ہے۔اس کتاب میں انہوں نے عہد رسالت سے عصرِ حاضر تک کے ایک ہزار سے زائد اصولیین کی فنّ اصول فقہ پر بارہ سو سے زائد کتب کا تعارف اور سو سے زائد اہم کتب کا ارتقائی انداز سے تحقیقی تجزیہ پیش کیا ہے۔نیز مختلف ممالک کے معروضی،سیاسی و جغرافیائی حالات میں فن اصول فقہ کے نشیب فراز، مصنفین کے مناہج، کتب کے مشتملات اہمیت، محاسن و معائب اور شروح و حواشی کو مؤلفین کی تاریخ وفات کی زمانی ترتیب کے لحاظ سے ترتیب دیا ہے۔ تاکہ قارئین ایک ہی نظر میں مختلف ادوار میں کئے جانے والے کام سے آگاہ ہو سکیں۔ اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ مولف موصوف کی اس کاوش کو اپنی بارگاہ میں قبول فرمائے اور ان کے میزان حسنات میں اضافہ فرمائے۔(م۔ا)

فن اصول فقہ کی تاریخ عہدرسالت ﷺ سے عصر حاضر تک حصہ اول

7

حرف تحسین

7

مختصر تعارف مصنف

9

تصدیق نامہ

11

اظہار تشکر

12

فہرست مضامین

13

مقدمہ

21

باب اول اصول فقہ کا نشا و ارتقاء

25

فصل اول اصول فقہ کا مفہوم ، موضوع ، استمداد ، حکم ، فائدہ و واضع

25

اصول فقہ کا مفہوم اور اس کا تحقیقی تجزیہ

27

علم اصول فقہ کی حیثیت

27

الفقہ کے لغوی و اصطلاحی معنی

31

قرآن کریم میں بعض دلائل

33

احادیث مبارکہ بے بعض دلائل

34

کلمات اصول الفقہ کی تقدیم و تاخیر

35

اصول الفقہ کے مابین اضافت کی تشریح

40

فقہ کی مجموعی تعریفات کی تاریخی ارتقائی تناظر میں مرحلہ وار درجہ بندی

42

قاضی بیضاوی سے منقول الفقہ کی تعریفات کا تحقیقی تجزیہ

44

فقیہ و اصولی کے مابین فرق

57

اصول فقہ کا موضوع اور اس کا تحقیقی تجزیہ

59

کیا کسی ایک فن کے متعدد موضوعات ہو سکتے ہیں

60

علم اصول فقہ کا واضع

69

فصل دوم علم اصول فقہ کی تصنیف و تالیف میں اصولیین کے مناہج

79

فصل سوم عہد رسالت ماب ﷺ عہد خلافت راشدہ و عہد بنو امیہ میں اصول فقہ کا نشا و ارتقاء

93

فصل چہارم عہد عباسی کے اصولیین اور ان کی اصول فقہ میں خدمات کا تاریخی تجزیہ

137

فصل پنجم عہد عباسی کے اصولیین اور ان کے اصول فقہ پر خدمات کا تاریخی و تحقیقی تجزیہ

203

باب دوم تقلیدی رجحانات کے فروغ کے بعد اصول فقہ پر کام کی رفتار کا تاریخی و تحقیقی تجزیہ

289

فصل اول ساتویں صدی ہجری کے اصولیین اور اصول فقہ پر ان کی خدمات کا تاریخی و تحقیقی تجزیہ

291

آٹھویں صدی ہجری کے اصولیین اور اصول فقہ پر ان کی خدمات کا تاریخی و تحقیقی تجزیہ

397

فن اصول فقہ کی تاریخ عہدرسالت ﷺ سےعصر حاضر تک حصہ دوم

491

فن اصول فقہ کی تاریخ عہدرسالت ﷺ سےعصر حاضر تک

491

فصل سوم نویں صدی ہجری کے اصولیین اور ان کی خدمات کا تاریخی و تحقیقی تجزیہ

493

فصل چہارم دسویں صدی ہجری کے اصولیین اور ان کی خدمات کا تاریخی و تحقیقی تجزیہ

539

فصل پنجم گیارہویں صدی ہجری کے اصولیین اور ان کی خدمات کا تاریخی و تحقیقی تجزیہ

565

فصل ششم بارہویں صدی ہجری کے اصولیین اور ان کی خدمات کا تاریخی و تحقیقی تجزیہ

589

باب سوم منتخب فقہی مذاہب کا تعارف و نشاء و ارتقاء

651

فصل اول حنفی مذہب اور اس کا نشا و ارتقاء

653

فصل دوم مالکی مذہب اور اس کا نشا و ارتقاء

681

فصل سوم شافعی مذہب اور اس کا نشا و ارتقاء

693

فصل چہارم حنبلی مذہب اور اس کا نشا و ارتقاء

705

فصل پنجم اہل سنت کے متروک مذاہب اور اس کا نشا

717

فصل ششم مذاہب شیعہ اور ان کا نشا و ارتقاء

727

باب چہارم احکام شریعت کے ماخذ

739

فصل اول احکام شریعت کے متفق علیہ ماخذ

741

الکتاب

741

السنۃ

749

الاجماع

757

القیاس

765

فصل دوم احکام شریعت کے مختلف فیہ ماخذ

775

استحسان

775

مصالح مرسلہ /استصلاح

785

استصحاب

794

سد الذرائع

797

عرف و عادت

804

قول

808

شرائع من قبلنا

811

خلاصہ

817

فہارس

819

فہرست آیات قرآنیہ

823

فہرست احادیث مبارکہ

831

فہرست شخصیات

837

فہرست مصادور الکتاب

875

فہرست فرق امم و قبائل

909

فہرست اماکن

917

فہرست مراجع التحقیق

935

اس کتاب کی دیگر جلدیں

فیس بک تبصرے

ایڈ وانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین 22515
  • اس ہفتے کے قارئین 53448
  • اس ماہ کے قارئین 770328
  • کل قارئین100932166
  • کل کتب8701

موضوعاتی فہرست