سنن دار قطنی ( فیض اللہ ناصر ) جلد اول

  • صفحات: 531
  • یونیکوڈ کنورژن کا خرچہ: 13275 (PKR)
(ہفتہ 07 مئی 2016ء) ناشر : ادارہ اسلامیات لاہور۔کراچی

چوتھی  صدی ہجری کے نامور تاجدارِ حدیث  امام دارقطنی﷫ ( (306 – 385جن کے تذکرے کے بغیر چوتھی  صدی کی تاریخ  نا  مکمل رہتی ہے ۔ ان  کا  مکمل  نام یہ  ہے ابو الحسن علی بن عمر بن احمد بن مہدی بن مسعود بن النعمان بن دینار بن عبدللہ   الدار قطنی البغدادی ہے، انہیں امام حافظ مجوِّد، شیخ الاسلام، محدث کے القاب سے یاد کیا جاتا ہے، ان کا تعلق بغداد کے محلہ دار قطن سے تھا جس کی وجہ سے انہیں الدارقطنی کہا جاتا ہے۔امام دارقطنی  نے  اپنے  وطن   کے علمی  سرچشموں سے سیرابی  حاصل کرنے کے بعد مختلف ممالک کا سفر کیا اور  بڑے بڑے ائمہ کرام سے تعلیم حاصل کی جن میں ابی القاسم البغوی، یحیی بن محمد بن صاعد، ابی بکر بن ابی داود، ابی بکر النیسابوری، الحسین بن اسماعیل المحاملی، ابی العباس ابن عقدہ، اسماعیل الصفار، اور دیگر شامل ہیں۔امام دارقطنی ، علل حدیث اور رجالِ حدیث ، فقہ، اختلاف اور مغازی اور ایام الناس پر دسترس رکھتے تھے۔آپ کی امامت  وثقاہت  پر تمام محدثین کا اتفاق ہے۔حافظ عبد الغنی الازدی فرماتے ہیں: رسول اللہ ﷺکی حدیث پر اپنے  وقت  میں  سب سے بہتر دسترس رکھنے والے تین افراد  ہیں۔  ابن المدینی،  موسی بن ہارون اور امام  دارقطنی ۔امام  دارقطنی کی تصانیف 80 سے زائد ہیں۔ 385 ھ میں ان کا انتقال ہوا اور بغداد کے قبرستان باب الدیر میں معروف الکرخی کی قبر کے نزدیک دفن ہوئے۔امام دارقطنی کی تصانیف میں سے ان  کی مشہور زمانہ  کتاب’’ سنن دارقطنی ‘‘ اپنی شان ومقام کےلحاظ سے جداگانہ مقام رکھتی ہے ۔اس میں احادیث کی تعداد 4835 ہے ۔  اس کتاب پر عربی زبان میں تشریح  وتعلیق، تحقیق وتخریج  کے کام تو ہوئے ہیں  لیکن اس کا اردو زبان میں ترجمہ تشریح کا کام  ابھی باقی تھا  ۔اس کمی کو پورا کرنے کے لیے   عزیز دوست محترم  جناب   حافظ فیض اللہ ناصر ﷾(فاضل جامعہ لاہور الاسلامیہ ،لاہور ) نے  سنن دار قطنی کا سلیس اور رواں ترجمہ کرنے کی سعادت  حاصل کی ہے ۔موصوف نے  اس کتاب کا ترجمہ کرتے وقت مؤسسۃ الرسالۃ ،بیروت کا مطبوعہ نسخہ سامنے رکھا ہے  جس کی تحقیق وتخریج کا کام  محقق دوراں الشیخ شعیب الأرنؤوط نے کیا ہے ۔مترجم نے اس تحقیق وتخریج کو بھی اختصار کے ساتھ  اس مترجم نسخے کی زینت بنادیا ہے ۔ جس سے اس کتاب کے علمی مقام اور افادیت میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔ فاضل مترجم اس کتاب کے  علاوہ  بھی تقریبا نصف درجن کتب کےمترجم ومرتب ہیں۔جس میں امام شافعی﷫ کتاب  مسندشافعی کاترجمہ بھی شامل ہے۔ ۔تصنیف وتالیف وترجمہ کے میدان میں موصوف کی  حسن  کارکردگی  کے اعتراف   میں  ان کی مادر علمی  جامعہ لاہورالاسلامیہ،لاہور  نے2014ء کے آغاز میں  انہیں اعزازی شیلڈ  وسند سے  نوازاہے ۔اللہ تعالیٰ ان کے  علم وعمل  اور زورِ قلم میں اضافہ فرمائے  (آمین)  (م۔ا)

عناوین

صفحہ نمبر

عرض ناشر

13

کلمات مترجم

15

امام دارقطنی ﷫کاتعارف

17

سنن دارقطنی پر ایک نظر

25

طہارت کے مسائل

 

اس پانی کاحکم جس میں کوئی ناپاک چیزمل جائے

29

اس پانی کابیان جس کاذائقہ یابو بدل جائے

44

اہل کتاب کے پانی سے وضو کابیان

49

اس کنویں کابیان جس میں جاندار گرجائے

50

سمندر کے پانی کاحکم

51

جس کھان ےکے اندر ایساجانور گرجائے جس میں خون نہ ہو

55

گرم پانی کابیان

56

اس پانی کابیان جس میں روٹی بھگوئی گئی ہو

57

فرمان باری تعالی :جب تم نماز کے لیے کھڑے ہوکی تفسیر

57

مسواک کے بچے ہوئے پانی یعنی جس میں مسواک بھگوئی گئی ہے)سے وضوءکابیان

58

سونے اور چاندی کے برتنوں کابیان

59

چمڑے کو دباغت کے ذریعے پاک کرنے کابیان

59

نیند سے بیدار ہونے والے شخص کے لیے ہاتھ دھونے کاحکم

67

نیت کابیان

69

کھڑے پانی غسل کرنے کابیان

70

بیوی کے ووضوء سے بچے ہوئے پانی کے استعمال کابیان

70

استنجاء کابیان

73

مسواک کابیان

78

بیت الخلاءمیں قبلہ رخ ہونے کامسئلہ

78

استنجاء کابیان

83

مختلف قسم کے جوٹھوں کابیان

84

برتن میں کتے کے منہ ڈالنے کابیان

85

بلی کے جوٹھے کابیان

89

وضوء سے پہلے بسم اللہ پڑھنا

94

نبیذسے وضوء کرنے کابیان

98

وضوءشروع کرتے وقت بسم اللہ پڑھن کی ترغیب

104

کلی کرنے اور ناک میں پانی چڑھانے کی ترغیب اور یہ دونوں کام وضوء کے آغاز میں کرنا

110

ہاتھوں کے بچے ہوئے پانی سے  مسح کرنے کابیان

115

دائیں ہاتھ سے پہلے بایاں ہاتھ دھونے کاجواز

116

رسول اللہﷺکے وضوء کاطریقہ

117

مسح کےلیے الگ پانی لینے کابیان

120

تین بار مسح کرنا

120

وضوء اور غسل کرنے والے کتنی مقدار کااستعمال مستحب ہے

124

سراورجسم کے بار ے میں سنتیں

125

دونوں پاؤں اور ایڑھیاں دھونے کاوجوب

125

نبی ﷺکایہ فرمان کہ کان بھی سرکا حصہ ہیں

128

وضو ءکی فضیلت اور دوران وضوءپورے پاؤں تک اچھی طرح پانی پہنچانا

143

وضوءکے بعد تولیے یارومال وغیرہ سے پانی پونچھنا

147

وضوء کے بعد شرمگاہ پر پانی کے چھینٹے مارنے کابیان

148

جب مرد عورت کی شرم گاہیں مل جائیں تو غسل واجب ہوجاتے ہے اگرچہ انزال نہ بھی ہو

148

غسل جنابت میں کلی کرنے اور ناک میں پانی چڑھانے کی روایات

153

عورت کے استعمال شدہ پانی سے غسل کرنے کی ممانعت

155

جنبی شخص اور حائضہ عورت کے لیے قرآن پڑھنے کی ممانعت

156

بے وضوء شخص کے لیے قرآن کو ہاتھ لگانے کی ممانعت

161

منی سے لباس وجسم پا ک کرنے کابیا ن اور خشک وتر ہونے کی صورت میں اس کاحکم

164

جب جنبی شخص سونا یاکھانا پینا چاہے تو کیاکرے

166

نبی ﷺکے اس فرمان کانسخ کہ پانی سے پانی لازم آتاہے

167

پیشاب کی نجاست کابیان اور اس سے بچنے کاحکم نیز ان جانورں کے پیشاب کاحکم جن کا گوشت کھایاجاتا ہے

167

اس بچے ار وبچی کے پیشاب کاحکم جوابھی کچھ کھاتے نہ ہوں

170

اس مسئلہ کی روایات  کہ بیٹھے بیٹھے سوجانے سے وضوء نہیں ٹوٹتا

172

زمین کو پیشاب کی نجاست سے پاک کرنے کابیان

173

وضوء کے نواقض کابیان ارو بیوی کو چھوٹے کے بارے میں بوسہ لینے کے بارے میں  روایات

174

عورت اور مرد کااپنی بھی شرم گاہ کوچھونے کے بارے میں رویات اور اس کاحکم

188

بغل کوچھونے کے بارے میں رویات کاذکر

195

خارج ازبدن امور یعنی تکبیر پھوٹنے قے آنے اورسینگی وغیرہ کے بعد وضوء کابیان

196

بیٹھ کر کھڑے ہوکر یالیٹ کر سوجانے اور سا میں وضوء لازم ہونے کابیان

206

نماز میں قہقہ لگانے کے بابت مروی احادیث او ران کی علتوں کابیان

208

تیمم کابیان

229

ہرنماز کے لیے تیمم کرنے کابیان

541

تیمم کرنے والے وضوء کرکے نماز پڑھنے والوں کو امامت کروانا مکروہ عمل

243

اس جگہ کابیا جہاں تیمم جائز ہوتاہے اور شہر سے یاپانی کے موجود ہونے کے مقام سے اس جگہ کی مسافت

243

اس شخص کے لیے تیمم کے جواز کابیان جسے کئی سال تک پانی نہ ملے

244

زخمی شخص کے لیے پانی استعمال اور زخم پر مرہم پٹی کے ساتھ تیمم کاجواز

246

سرکے کچھ حصے پرمسح کے جواز کابیان

250

موزو ں پر مسح کابیان

251

مووزوں پر مسح کے بار  ے میں رخصت اور ساس بارے میں رویاتت کاختلاف

252

مشرکین کے برتنوں میں سے وضوء اور تیمم کرنا

259

بغیروقت کی حدکے موزوں بر مسح کابیان

266

حیض کےمسائل

 

حیض سے متعلقہ احکام کابیان

269

جب عورت حیض سے پاک ہوجائے تواس پر نماز لازم ہوجاتی ہے

293

جسم سے بہنے والے خون کے خروج کے ساتھ نماززکاجوز کابیان

293

ستر کابیان اور سا کابیان کہ ران بھی پردے کاعضو ہے

295

پیٹوں پرمسح کاجواز

296

اس جگہ کابیان جس میں نماز پڑھنا جائز ہے

298

آپ کے براؤزر میں پی ڈی ایف کا کوئی پلگن مجود نہیں. اس کے بجاے آپ یہاں کلک کر کے پی ڈی ایف ڈونلوڈ کر سکتے ہیں.

اس کتاب کی دیگر جلدیں

اس ناشر کی دیگر مطبوعات

ایڈ وانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین 2010
  • اس ہفتے کے قارئین 16288
  • اس ماہ کے قارئین 33295
  • کل قارئین55303041

موضوعاتی فہرست