دار السلام، لاہور

دار السلام، لاہور
268 کل کتب
دکھائیں

  • 41 سنن ابن ماجہ (مترجم) جلد1 (جمعہ 21 جنوری 2011ء)

    مشاہدات:25004

    اس وقت آپ کے سامنے صحاح ستہ کی آخری کتاب ’سنن ابن ماجہ‘ کا سلیس اور رواں اردو ترجمہ ہے۔ صحاح ستہ میں سے بخاری و مسلم کی تمام احادیث کی صحت پر محدثین متفق ہیں لیکن بقیہ چار کتب ایسی ہیں جن میں صحیح احادیث کے ساتھ ساتھ ضعیف احادیث بھی شامل ہیں۔سنن ابن ماجہ کو پانچویں صدی ہجری کے آخر میں کتب ستہ میں شمار کیا جانے لگا۔اس کے بعد ہر دور میں یہ  کتاب اپنی حیثیت منواتی گئی ۔ صحت و قوت کے لحاظ سے صحیح ابن حبان، سنن دار قطنی اور دوسری کئی کتب سنن ابن ماجہ سے برتر تھیں لیکن ان کتب کو وہ پذیرائی اور قبول عام حاصل نہ ہوسکا جو سنن ابن ماجہ کو حاصل ہوا۔’سنن ابن ماجہ‘ کا اسلوب نہایت شاندار ہے اور تراجم ابواب کی احادیث کی مطابقت نہایت واضح ہے۔ کتاب مختصر ہونے کے باوجود احکام و مسائل میں نہایت جامع ہے۔ امام ابن ماجہ نے اپنی سنن میں 482 ایسی صحیح احادیث کا اضافہ کیا ہے جو باقی کتب خمسہ میں نہیں ہیں۔ ’سنن ابن ماجہ‘ کی اسی اہمیت کےپیش نظر مولانا عطاء اللہ ساجد نے افادہ عام کے لیے اسے اردو میں منتقل کرنے کا بیڑہ اٹھایا۔ مولانا نے کتاب کا عمدہ ترجمہ کرنے کے ساتھ ساتھ ہر حدیث سے ثابت ہونے والے فوائد کا بھی متصل تذکرہ کیا ہے۔ حافظ صلاح الدین یوسف صاحب کی نظر ثانی اور تصحیح و اضافات نے کتاب کی افادیت کو بڑھا دیا ہے۔ تخریج و تحقیق کے لیے حافظ زبیر علی زئی کی خدمات حاصل کی گئی ہیں انہوں نے ہر حدیث پر اپنی تحقیق کے مطابق حکم لگایا ہے کہ...

  • 42 میں توبہ تو کرنا چاہتا ہوں لیکن؟ (اتوار 13 مارچ 2011ء)

    مشاہدات:13937

    خدا تعالیٰ اپنے بندے پر اس قدر مہربان ہے کہ اس کی بے پایاں  رحمت اپنے بندے کی لغزشوں کو معاف کرنے کے مواقع ڈھونڈتی رہتی ہے۔ اللہ تعالیٰ ایسے بندے سے بے حد خوش ہوتے ہیں جو گناہ کرنے کے فوراً بعد اپنی جبیں کوبارگاہِ ایزد میں جھکا دیتا ہے۔ زیر مطالعہ کتاب ’میں توبہ تو کرنا چاہتا ہوں لیکن؟‘ میں اسی مضمون کو موضوع بحث بنایا گیا ہے۔ یہ تصنیف شیخ صالح المنجد کی ہے جسے عربی سے اردو میں منتقل کیا گیا ہے۔ کتاب کا طبع کافی پرانا ہے اس وجہ سے کتابت معیاری نہیں ہے۔ البتہ کتاب میں بیان کردہ مضامین خصوصی اہمیت کے حامل ہیں۔ توبہ سے متعلق جہاں نہایت اہم معلومات مہیا کی گئی ہیں وہیں توبہ کی شرائط اور توبہ کرنے والوں کے لیے چند اہم فتاوے بھی کتاب کی زینت ہیں۔

     

  • 43 قرآنی قاعدہ (ہفتہ 19 جون 2010ء)

    مشاہدات:3846

    قرآن کریم اللہ عزوجل کامقدس کلام ہے یہ انسان کو اس کی زندگی کااصل مقصد بتاتا ہے اور مرنے کے بعد جو حالات پیش آئیں گے ان کی اطلاع دیتا ہے لہذا ضروری ہے کہ اسے پڑھنے اور سیکھنے کا اہتمام کیا جائے تعلیم قرآن کی ابتدائی منزل یہ ہے  کہ اسے پڑھنے کا صحیح طریقہ اپنایا جائے زیرنظر قرآنی قاعدہ اسی مقصد کے لیے ترتیب دیا گیا ہے اگر اسے صحیح انداز سے سمجھ کر پڑھ لیا جائے تو قرآن کی درست قراءت سیکھی جاسکتی ہے اس میں طالبان علم کی سہولت کے لیے مختلف رنگوں کیے ذریعے حروف کی پہچان کے نہایت مؤثر طریقے بروئے کار لائے گئے ہیں

  • 44 صلوٰۃ النبی صلی اللہ علیہ وسلم (جمعہ 25 مارچ 2011ء)

    مشاہدات:13602

    ارکان اسلام میں نماز کی اہمیت سب سے بڑھ کر مسلم ہے۔ اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے ایک فرمان کامفہوم یہ ہے کہ مسلمان اور کافر کے مابین فرق نماز پڑھنے اور نہ پڑھنے کا ہے۔مولانا محمد ابراہیم میر سیالکوٹی کا شمار کتاب وسنت کے خادمین میں ہوتا ہے۔ اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی نماز پر صحیح اور مستند روایات کی روشنی میں لکھی جانے والی کتب میں سے غالباًاردو زبان میں یہ پہلی جامع ترین کتاب ہے جو ۱۹۳۲ء کے لگ بھگ لکھی گئی ہے اور پہلی دفعہ شائع ہوئی ہے۔مولانا کی اس کتاب کا ایک امتیاز یہ بھی ہے کہ اس میں نماز کے ظاہری مسائل کو کتاب وسنت کے مطابق ادا کرنے کی تو تلقین کی ہی گئی ہے اس کے علاوہ نماز کے باطنی پہلو یعنی خشوع و خضوع، نماز کے ذریعے اللہ سے تعلق قائم کرنے ، نماز کے اذکاروادعیہ اور نماز کو سکون واطیمنان سے ادا کرنے کے بارے بھی خصوصی توجہ دی گئی ہے۔ عرصہ دراز ہوا کہ نماز کے ظاہری مسائل میں اختلاف کی وجہ سے ان کی اہمیت اور تاکید نماز پر لکھی جانے والی کتابوں میں زیادہ نمایاں ہو گئی تھی جس کے باعث نماز کا ایک اہم پہلو یعنی نماز کے ذریعے تقرب الی اللہ، محبت الہی اور ذکر الہی کا حصول نظروں سے اوجھل ہو گیا تھا۔مولانا کی اس کتاب کو پڑھ کر نماز کے مسائل کا علم تو ہوتا ہی ہے ، اس کے ساتھ نماز میں روحانیت اور خشوع وخضوع کا پہلو غالب کرنے کے طریقے بھی معلوم ہوتے ہیں۔

  • 45 مختصر زادالمعاد (منگل 05 اپریل 2011ء)

    مشاہدات:21636

    سيرت دينی موضوعات ميں سے ايک اہم تر موضوع ہے جس ميں اللہ کے رسول صلی اللہ عليہ وسلم کي ذاتی اور شرعی زندگی کامطالعہ کيا جاتا ہے۔ايک مسلمان ہونے کے ناطے ہماری يہ بنيادی ذمہ داری بنتی ہے کہ ہميں اللہ کے رسول صلی اللہ عليہ وسلم کي ذات، حالات، شمائل اور سيرت سے واقفيت ہونی چاہيے۔ ہر دور ميں اہل علم نے سيرت پر کتابيں لکھی ہيں۔امام محمد بن اسحاق (متوفی152ھ) کی کتاب سيرت ابن اسحاق اس موضوع پر پہلی جامع ترين کتاب شمار ہوتی ہے اگرچہ امام محمد بن اسحاق سے پہلے صحابہ وتابعين ميں سے 40 افراد کے نام ملتے ہيں جنہوں نے سيرت کے متفرق ومتنوع پہلوؤں پر جزوی بحثيں کي ہيں۔اللہ کے رسول صلی اللہ عليہ وسلم کي سيرت پر مختلف اعتبارات سے کام ہوا ہے جن ميں ايک اہم پہلو سيرت کا فقہی اور حکيمانہ پہلو بھی ہے يعنی فقہی اعتبار سے سيرت کو مرتب کرنا اور اللہ کے رسول صلی اللہ عليہ وسلم کے اعمال و افعال کی حکمتيں بيان کرنا۔ امام ابن القيم (متوفی 751ھ)کی کتاب ’زاد المعاد‘ سيرت کے انہی دو پہلوؤں کو سامنے رکھتے ہوئے مرتب کي گئی ہے۔بعض اہل علم نے ’زاد المعاد‘ کو فلسفہ سيرت کی کتاب بھی کہا ہے جبکہ بعض اہل علم کا کہنا يہ ہے کہ امام صاحب کي يہ کتاب ’عملی سيرت‘ کی ايک کتاب ہے۔ امام ابن القيم کی اس کتاب کا ايک خوبصورت اختصار شيخ محمد بن عبدا لوہاب رحمہ اللہ نے ’مختصر زاد المعاد‘ کے نام سے کيا ہے جسے سعيد احمد قمر الزمان ندوی نے اردو ترجمہ کی صورت دی ہے۔ امام ابن القيم رحمہ اللہ کی اس کتاب ميں بعض بہت ہی نادر اور قيمتی و علمی نکات بھی منقول ہو ئے ہيں جو ان کے روحانی مقام و...

  • فکر وعقیدہ کی گمراہیوں میں سے شرک اور بدعت دو بڑی گمراہیاں ہیں۔ امام ابن تیمیہ رحمہ اللہ کی کتب میں ان دونوں گمراہیوں پر مفصل کلام موجود ہے۔ شیخ الاسلام رحمہ اللہ کی اس کتاب کا موضوع بدعات ہیں ۔ شیخ الاسلام نے اپنی اس کتاب میں اپنے زمانے میں پائی جانے والی متعدد بدعات کی نشاندہی کی ہے اور ان کا رد کیا ہے۔اس کتاب کو بالاستیعاب پڑھنے والوں پر ایک تاثر قائم ہوئے بغیر نہیں رہے گا کہ شیخ الاسلام کا شرک اور بدعت کا منہج تردید مختلف ہے۔ شرکیہ و کفریہ افکار کے حاملین اشخاص اور گروہوں کا رد کرتے ہوئے شیخ الاسلام کا لب ولہجہ اور اسلوب، افکار ونظریات اور ان کے حاملین دونوں کے حوالہ سے انتہائی سخت ہوتاہے جبکہ اہل بدعت اور مبتدعین کی تردید میں موقف میں تو لچک نہیں ہے اور بدعات کی خوب تردید موجود ہے جبکہ اہل بدعت پر نقد کرتے ہوئے بہرحال رویہ اتنا سخت نہیں ہے اور کبھی کبھار بعض بدعات میں ان کے لیے اجتہاد ی خطا کے نام پر ثواب کی امید بھی رکھتے ہیں، بشرطیکہ وہ اپنی بدعات میں مخلص ہوں اور یہ بدعات عبادات وغیرہ کی قبیل سے ہوں لیکن اس کے باوجود ان کی بدعات پر شدید نکیر کے قائل ہیں۔شیخ الاسلام کا کہنا یہ ہے کہ بدعات میں خیر وشر دونوں پہلو ہوتے ہیں ۔ خیر کا پہلو تو وہ عبادات اور اعمال صالحہ ہیں جو اہل بدعت کرتے ہیں مثلاً بعض متعین راتوں کو عبادات کے لیے مخصوص کرنا یا متعین دنوں میں روزہ رکھنا اور شر کا پہلو ان کی فکر میں ہوتا ہے کہ وہ اس عمل کو دین سمجھ کر کررہے ہوتے ہیں اور بدعات کے رواج سے سنن اٹھا لی جاتی ہیں جس سے دین غیر محفوظ ہوتا چلا جاتا ہے۔
    شیخ الاسلام رحمہ اللہ نے اپنی اس کتاب می...

  • 47 فتاوی اسلامیہ جلد 1 (جمعہ 22 اپریل 2011ء)

    مشاہدات:18607

    شرعی  احکام اور مسائل دینیہ سے آگاہی  ہر مسلمان مرد اور عورت کی ضرورت ہے اور اس روحانی تشنگی کی سیرابی کے لیے شروع اسلام سے عامۃ الناس کی راہنمائی کے لیے نبی صلی اللہ علیہ وسلم  سائلین کا خود تشفی بخش جواب دیتے ۔بعض اوقات مسائل کی پیچیدگیوں کی عقدہ  کشائی کے لیے  وحی کا نزول ہوتا ۔پھر صحابہ کرام ،تابعین ،تبع تابعین اور علماء و محدثین نے اس ذمہ داری کو نہایت اچھے انداز سے نبھایا۔اگرچہ قدیم علماء کے فتاویٰ کافی تعداد میں  موجود ہیں لیکن ہر دور میں فتویٰ طلبی  اور نت نئے مسائل جنم لینے کی وجہ سے ایسے مسائل کی وضاحت کی اہمیت برقرار رہی بلکہ فتویٰ طلبی کی ضرورت او رافتاء کی اہمیت میں اضافہ ہوتا رہا ہے ۔پاکستان  میں کئی جید علماء اپنے طور یاکسی جماعت کے پلیٹ فارم پر عوام الناس کے دینی مسائل کے جوابات قلمبند کر رہے ہیں اور کئی علماء کے فتاویٰ منصہ شہود پر آکر داد تحسین حاصل کر چکے ہیں۔لیکن زیر نظر فتاویٰ اسلامیہ کا اسلوب عام فتاویٰ سے جداگانہ ہے کیونکہ یہ فتاویٰ جات مختلف نامور عرب علماء کے ہیں کہ جن کی علمی حیثیت کو دنیا تسلیم کرتی ہے اور عرب علماء کے پینل کے فتاویٰ میں علمی رسوخ اور پختگی تنہا عالم سے کہیں زیادہ ہے۔پھر عرب علماء کا  طریقہ استدلال انتہائی جانشین اور انداز بیان انتہائی شائستہ اور عام فہم ہے ایک عام قاری کو بھی ان فتاویٰ کے سمجھنے میں ذرا دقت نہیں ہوتی ۔پھر سونے پہ سہاگہ کہ  اس  کا ترجمہ نشرو اشاعت کے عالمی مسلمہ ادارے دارالسلام کی طرف سے کیاگیا ہے جس کی کتب کی طباعت و شستہ تحریر کے اپنے اور بے گانے سبھی معترف ہ...

  • 48 ارکان اسلام وایمان (جمعہ 27 مئی 2011ء)

    مشاہدات:16006

    زیر نظر کتاب عالم عرب کے مشہور داعی او رعالم دین شیخ محمد بن جمیل زینو کی تحریر کردہ ہے۔مصنف فرقہ واریت کے زہر سے پاک ہیں اور ہر انسان کی بھلائی اور خیر خواہی کے جذبے سے سرشار ہیں۔انہوں نے صرف قرآن کریم اور احادیث رسول ہی کو پیش نظر رکھاہے اور اس دنیا میں دین کے مطابق کامیاب زندگی بسر کرنے کے تمام اصول و آداب وضاحب سے بیان کر دیے ہیں۔فاضل مؤلف نے قرآنی آیات اور نبوی فرامین کی روشنی میں ثابت کیا ہے کہ رب ذوالجلال کی وحدت،یکتائی،بڑائی اور کبریائی کے آگے سر جھکا دینا ہی انسان کی سب سے بڑی عزت اور کامیابی ہے۔انہوں نے تمام ارکان ایمان پر شرح و بسط سے روشنی ڈالی ہے ۔اس کے ساتھ ساتھ ارکان اسلام اور ان کے متعلقات کو بھی قرآن و حدیث کے دلائل سے واضح کیا ہے ۔ضرور ی عقائد و اعمال سے واقفیت کے لیے یہ کتاب انتہائی مفید ہے جو ہر گھر اور لائبریری میں موجود ہونی چاہیے ۔
     

  • 49 دعوت حق کے تقاضے (منگل 24 مئی 2011ء)

    مشاہدات:11034

    دعوت حق تمام انبیاء ورسل علیہم السلام کا اصلی فرض اور مستقل شعار رہا ہے ،یہی وجہ ہے کہ نبی اکرم صلی ا للہ علیہ وسلم کے بعد ختم نبوت کے باعث اب یہ فرض امت مسلمہ کے علما اور داعیان حق کے سپرد ہے  کہ وہ پوری انسانیت کو معروف کا عامل بننے اور منکرات سے بچنے کا راستہ دکھائیں۔اس ذمہ داری سے عہدہ برآں ہونے کے لیے ضروری ہے کہ دعوت حق کے تقاضوں اور داعی کی صفات سے واقفیت حاصل کی جائے ۔زیر تبصرہ کتاب میں اسی نکتے کو بحث و نظر کا مدار بنایا گیا ہے ۔یہ کتاب دراصل ایک ممتاز عربی عالم عبدالعزیز بن احمد المسعود کی عربی تصنیف ’صفات الآمر بالمعروف والناہی عن المنکر ‘کا سلیس ترجمہ ہے جو مولانا یونس بٹ کے قلم سے ہے ۔فاضل مصنف نے داعیان حق  کی صفات کو بڑی خوبصورتی سے اجاگر کیا ہے ۔ہر داعی دین پر اس کتاب کا مطالعہ لازم ہے تاکہ صحیح شرعی طریقے کے مطابق فریضہ دعوت کی انجام دی کر سکے۔
     

  • ہمارے معاشرے کے بگاڑ کا اصل سبب یہ ہے کہ ہر شخص صرف اپنے نفع و نقصان کا ترازو تھامے بیٹھا ہے جس کے نتیجے میں دوسروں کے حقوق پامال ہو رہے ہیں او راپنے فرائض سے غفلت برتی جارہی ہے ۔جب تک یہ صورت حال نہیں بدلتی اور تمام حقداروں کے حقوق بخیر و خوبی ادا کرنے کا احساس پیدا نہیں ہوتا ،معاشرے کی حالت اعتدال پر نہیں آئے گی۔مفسر قرآن حافظ صلاح الدین صاحب یوسف نے  زیر نظر کتاب میں اسی بات کو اجاگر کیا ہے ۔حافظ صاحب موصوف نے حقوق اللہ ،حقوق الوالدین،حقوق الزوجین،حقوق الاولاد اور حقوق العباد کے زیر عنوان ہر فرد کے  حقوق و فرائض کو کتاب وسنت کی روشنی میں بیان کیا ہے ۔اہل اسلام کو اس کتاب کا مطالعہ لازماً کرنا چاہیے تاکہ اپنے فرائض اور دوسروں کے حقوق سے آگاہی ہو سکے اور ایک خوبصورت اور پر امن معاشرے کی بنیاد رکھی جا سکے۔
     


ایڈوانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین: 707
  • اس ہفتے کے قارئین: 4631
  • اس ماہ کے قارئین: 46493
  • کل قارئین : 46598057

موضوعاتی فہرست

ای میل سبسکرپشن

محدث لائبریری کی اپ ڈیٹس بذریعہ ای میل وصول کرنے کے لئے ای میل درج کر کے سبسکرائب کے بٹن پر کلک کیجئے۔

رجسٹرڈ اراکین

ایڈریس

        99--جے ماڈل ٹاؤن،
        نزد کلمہ چوک،
        لاہور، 54700 پاکستان

       0092-42-35866396، 35866476، 35839404

       0092-423-5836016، 5837311

       library@mohaddis.com

       بنک تفصیلات کے لیے یہاں کلک کریں